dpo okara statement on police stations 440

اوکاڑہ،تھانوں کو شریف شہریوں کیلئے حقیقی معنوں میں جائے امان بنائیں گے،ڈی پی اواطہراسماعیل

اوکاڑہ،ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر اطہر اسماعیل نے کہا ہے کہ پولیس فورس ایک ٹیم کے طور پر کام کرے تو توقع سے زیادہ مثبت نتائج برآمد ہوں گے تمام افسران ماتحت ملازمین کے ساتھ محبت اور پیار سے پیش آئیں تھانے شریف شہریوں کے لئے امن کا گہوارہ ہوں جب کہ سماج دشمن عناصر کے لئے عبرت کا مقام ہوں ان خیالات کا اظہا رانہوں نے ضلع بھر کے ایس ڈی پی اوز ،ایس ایچ اوز اور انچارج انوسٹی گیشن کے ایک اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر اطہر اسماعیل نے کہا ہے کہ تمام افسران اور دیگر سٹاف نیک نیتی سے اپنی پیشہ وارانہ ذمہ داریاں نبھائیں تو میں ان کی ہر مشکل میں کندھے سے کندھا ملا کر کھڑا ہوں گا ان پر کسی قسم کی آنچ نہیں آنے دوں گا اور اگر کسی نے رو گردانی کی تو اسے گھر کا راستہ دکھا دوں گا کسی بھی فورس کی کامیابی کی بنیادی خوبی ایک ٹیم کے طور پر کا م کرنے سے ہے جس کے اثرات جلد ہی تمام سٹاف اور عوام تک پہنچ جاتے ہیں جس کے لئے ضروری ہے کہ افسران اپنی ٹیم میں شامل ماتحت سٹا ف کے ساتھ محبت اور پیار سے پیش آئیں اور سب ساتھ لے کر چلیں انہوں نے کہا کہ آئی جی کی اشتہاریوں کے خلاف چلائی گئی مہم کا میاب کرنا ہماری اولین ترجیح ہے جس کو تیز کیا جائے تاکہ ایسے عناصر کھلے عام پھرنے کی بجائے جیل کی سلاخوں کے پیچھے ہوں انسپکٹر جنرل پولیس چاہتے ہیں کہ عوام میں پولیس کا اچھا امیج ابھر کر سامنے آئے اس کے لئے ضروری ہے کہ کوئی بھی شریف شہری تھانہ میں داخل تو اسے تحفظ کا احساس ہو اگرتھانہ کی حدودمیں سماج دشمن عناصر کے لئے زمین تنگ کر دی جائے ان پر قانون کا خوف مسلط کر دیا جائے تو جرائم میں خاطر خواہ کمی ہوگی انہوں نے پولیس افسران اور فورس پر زور دیتے ہوئے کہا کہ سرقہ وہیکل اور روڈ رابری کے ملزمان کے ساتھ کوئی رعائیت نہ کی جائے اس ضمن میں کوئی کوتاہی برداشت نہ کی جائے گی نیشنل ایکشن پلا ن پر عمل کر نا دیگر اداروں کی طرح پولیس کی ذمہ داری ہے تاکہ معاشرہ میں کوئی دہشت گرد سرنہ اٹھا سکے بجلی چوری اور پانی چوری کے ملزمان پوری ریاست کے ملزم ہیں ان کے خلاف بھر پورکاروائی کی جائے اڈسٹرکٹ پولیس آفیسر اطہر اسماعیل نے کہا ہے کہ میرے تجربہ کی بات ہے کہ اگر گشت کے نظام کوموثر بنایا جائے پولیس سٹرکوں پر ہوتو معاشرہ کا امن لوٹنے والے چوہوں کی طرح بلوں میں دبک کر بیٹھ جاتے ہیں ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں