secertary health ali jan visit okara DHQ 594

اوکاڑہ.سیکرٹری ہیلتھ علی جان کا ڈی ایچ کیو کا وزٹ،شکایات سے عاجز آکر فرار،عوام نے سیکرٹری ہیلتھ مردہ باد کے نعرے لگادئیے

سیکرٹری ہیلتھ پنجاب علی جان خاں نے اوکاڑہ میں ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال کا دورہ کیا مقامی انتظامیہ نے پلان کے مطابق پہلے سے تیار کیے گئے وارڈز اور کمروں کا وزٹ کروایا ممکنہ دورے کی ڈسٹرکٹ انتظامیہ کو گزشتہ روز سے ہی خبر تھی تاہم خرابی اس وقت پیدا ہوئی جب اسی دوران ہسپتال میں موجود مریضوں اورانُ کے لواحقین کو سیکرٹری ہیلتھ کی آمد کا پتا چلا توانہوں نے شکایات کے انبار لگا دئیے مریضوں کے لواحقین کا کہنا تھا کہ ہسپتال میں موجود ڈیوٹی پر موجود ڈاکٹر دوران ڈیوٹی موبائل فون پر یا میڈیکل ریپس کے ساتھ گپ شپ کرتے دکھائی دیتے ہیں اور اگر ڈاکٹر حضرات کو مریض کی چیکنگ کے لیے اسرار کیا جائے تو نازیبا زبان استعمال کرتے ہوئے سیکورٹی گارڈز کے ذریعے ہسپتال سے باہر نکال دیتے ہیں اس موقع پر مریضوں کے لواحقین نے بتایا کہ حالت تشویش ناک ہونے کی بنا پر مریض کولاہور ریفر کئے ہوئے پانچ گھنٹے گزر جانے کے باوجود ایمبولینس دستیاب نا ہے ایمبولینس تب بھیجی جائے گی جب تک پانچ مریضوں کو لاہورریفر نہیں کیا جاتا اس موقع پر ایک مریض کے لواحقین کا کہنا تھا کہ ہم اپنی بچی کو علاج کے لیے ہسپتال لے کر آئے تھے لیکن ڈاکٹرز نے ایمرجنسی میں لائے گئے مریض کو چیک کرنے کی بجائے چاہے پینے کو ترجیع دی جبکہ مریضہ کی وارث کے اسرار پر ڈیوٹی پر موجود ڈاکٹرزعمیراور ثاقب نے بجائے مریضہ کو چیک کرنے کے اس کو سیکورٹی گارڈز کے ذریعے دھکے مار کر ہسپتال سے باہر نکال دیا شکایات کی بڑھتی ہوئی تعداد کو دیکھ کران کو حل کرنے کیلئے احکامات دینےاورعوام کی اشک شوئی کی بجائے سیکرٹری ہیلتھ نے بھاگ جانے میں ہی عافیت جانی اور بھاگ کر اپنی گاڑی میں بیٹھ کر فرار ہو گئے سیکرٹری ہیلتھ کے فرار ہوتے ہی انتظامیہ کی کارکردگی کا پول کھل کر سامنے آ گیا اسی دوران مریضوں کے لوحقین نے سیکرٹری ہیلتھ مردہ باد کے نعرے لگائے اور بھر پور احتجاجی مظاہرہ کیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں