hujra mai zimedar ka mazdoor per tashadad 531

حجرہ کے زمیندار نےمزدوروں پر ظلم و ستم میں سندھی وڈیروں کو بھی پیچھے چھوڑدیا

آپ نے سوشل میڈیا پر سندھی وڈیروں کے اپنے ماتحتوں پر ظلم و ستم کے واقعات تو اکثردیکھے ہوں گے جن میں نام نہاد لینڈلارڈز کی جانب سے مزارعین پر وحشیانہ تشدد کیاجاتا ہے ایسا ہی ایک واقعہ آج دیپالپور کے نواحی علاقہ حجرہ کے گاؤں جیٹھ پور میں پپیش آیا ہےوڈیرے زمینداروں ملزمان جوہدری اسلم،حنیف،محمد دین وغیرہ دس افراد نے صبح نو بجے مقامی مزدوروں ساجد، شرافت پسران نور محمد چھینبہ کو انکے گھر سے اٹھا لیا اور گلے میں پھندے ڈال کر گاوں میں گھسیٹتے ہوئے اپنے ڈیرہ پر لے جاکر انسانیت سوز تشدد کا نشانہ کچھ اس انداز میں بنایا کہ انہیں برہنہ کر کے انکی پاخانہ والی جگہ اور پچھلی جانب برف والے سوئے مارتے رہے وجہ عناد یہ کہ ظلم کا نشانہ بننے والے دونوں بھائیوں نے چوہدری اسلم وغیرہ کی زرعی زمینوں پر زبردستی کام کرنے سے انکار کردیا تھا جس پر وہ آگ بگولا ہوگیا اور اس نے اپنی چودھراہٹ کی توہین محسوس کی اور اس نے اپنے نو کارندوں کیساتھ ان کیساتھ ظلم کا یہ کھیل کھیلا کہ پورا گاؤں لرزاٹھااس دوران مقامی پولیس اطلاع پاکر موقع پر پہنچی تو سفاک ملزمان فرار ہو گئے پولیس نے نازک حالت میں دونوں مضروب مزدوروں کو تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال پہنچایا تفتیشی تھانیدار خالد محمود بھٹی نے صحافیوں کو بتایا کہ میڈیکل رپورٹ کی روشنی میں ہی قانونی کاروائی کی جائے گی ڈی ایس پی سرکل دیپالپور چوہدری انعام الحق نے استفسار پر کہا کہ جلد مقدمہ درج کر کے ملزمان کو گرفتار کر لیا جائے گا دلخراش واقعہ ہر علاقہ میں تشویش پھیل گئی.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں