haveli lakha mai lady atai doctor k hathon man bacha jan bahaq 487

حویلی لکھا میں عطائیت نے ماں اور بچے کی جانیں لے لیں

حکومت کی جانب سے عطائی ڈاکٹروں کے خلاف کاروائیوں کے دعووں کے باوجود یہ مکروہ دھندہ ختم نہیں ہوا ہے اور پیسے کے لالچ میں عطائی ڈاکٹر اور دائیاں کئی ہلاکتوں کا باعث بن رہے ہیں جیسا کہ گزشتہ روز دیپالپور کے نواحی علاقے حویلی لکھا میں بھی ہوا جہاں عطائیت نے دو مزید جانیں لے لیں ہیں.حویلی کے ایک گاؤں رانجھے میں عابدہ نامی ایک خاتون کے ہاں بچے کی پیدائش تھی تو اس کا خاوند علی شیر اسے جموں وچھل میں ایک دائی بیداں بی بی کے پاس لے گئے جو انہیں ولٹویہ میں ایک میٹرنٹی سنٹر لے گئی جہاں کلثوم نامی عطائی لیڈی ڈاکٹر نے عابدہ کے شوہر کو یقین دہانی کروائی کہ وہ اس کا نارمل کیس کردے گی لیکن اس کے بارہ ہزار روپے چارج ہوں گے جس پرعابدہ کے وارثان راضی ہوگئے تاہم صبح آٹھ علاج کیلئے آنیوالی عابدہ نے شام تک تکلیف سے تڑپتے تڑپتے جان دے دی.عابدہ کے وارثان نے حکام بالا سے انصاف کی اپیل کی ہے.
رپورٹنگ اینڈ فوٹوکریڈٹ… ظفراقبال ظفر،عمران جاوید چوہان حویلی لکھا

Subscribe
ہماری تمام سٹوریز اپنے میل باکس میں حاصل کرنے کیلئے سبسکرائب کیجئیے
I agree to have my personal information transfered to MailChimp ( more information )

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.