molana zahid mehmood qasmi 470

دیپالپور،ملک میں ہم آہنگی ،برداشت،رواداری اورتحمل مزاجی کافروغ وقت کی اہم ترین ضرورت ہے،مولانا زاہدمحمودقاسمی

دیپالپور،مرکزی چیئرمین علماء کونسل ومشیرمذہبی امور وزیراعلیٰ پنجاب مولانازاہدمحمودقاسمی نے ڈپٹی سیکرٹری علماکونسل مولانا شبیراحمدعثمانی ،صدرعلماکونسل حافظ محمداحمد،مرکزی وائس چیرمین علما کونسل قاری محمدشعبان صدیقی اور حافظ حسان احمد آزاد کے ہمراہ جامعہ مسجد ریاض الجنۃ میں صحافیوں کیساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ شدت پسندی ،انتہاپسندی اورانتشار کو مکمل طور پر ختم کرکے ملک میں ہم آہنگی ،برداشت،رواداری اور تحمل مزاجی کو فروغ دینا وقت کی اہم ترین ضرورت ہے موجودہ حا لات میں مذہبی قائدین کی ذمہ داریاں مزید بڑھ گئی ہیں ،نوازشریف اور عمران خان پر جوتا اچھالاجانا اور خواجہ آصف پرسیاسی پھینکنا انتہائی تکلیف دہ امر ہے۔انہوں نے کہا کہ ہمیشہ سے ہی علمائے کرام پر فرقہ واریت کو فروغ دینے کا الزام عائدکیا جاتا رہاہے لیکن اب سیاسی اکابرین بھی برداشت اور تحمل کی بجائے اپنے کارکنان میں عدم برداشت کو فروغ دے رہے ہیں اس قسم کے طرزعمل کی نہ تو اسلام میں گنجائش ہے اور ہی پاکستان کا قانون اور اخلاقیات اس کی اجازت دیتے ہیں اس کی بجائے ہمیں چاہئے کہ ہم ملک میں اسلامی وجمہوری روایات کو قائم کرنے کی جدوجہد کریں ۔انہوں نے رائے ونڈ دھماکے کی شدید مذمت کرتے ہوئے اس میں شہید ہونے والے پولیس کے بہادرجوانوں کو خراج تحسین پیش کیا کہ انہوں نے اپنی جانوں کے نذرانے پیش کرکے دیگر کئی لوگوں کی جانیں بچائیں۔دہشتگردی کے خلاف جنگ میں ملک کے تمام مکتبہ فکر کے اکابرین اور ذمہ داران ملی یکجہتی کا مظاہرہ کرتے ہوئے ایک بیانیہ پر متفق ہوئے جس کے نتیجے میں ملک میں دہشتگردی اور انتہا پسندی پر کافی حد قابو پالیا گیا حتیٰ کہ آرمی چیف کی دعوت پر امام کعبہ نے جی ایچ کیو کا دورہ کیا اور وہاں انہوں نے پاکستان کے متفقہ بیانیہ کی تائید اور توسیع کی ہے ۔علاوہ ازیں ہم فلسطین،عراق،اور شام میں ہونیوالے مظالم او رزیادتی کی مذمت کرتے ہوئے عالمی عسکری اتحاد اور اوآئی سی سے مطالبہ کرتے ہیں وہ مسلم ممالک میں جاری ظلم و ستم کے خاتمے کیلئے اپنا موثرکردار اداکرے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں