depalpur baldia mai azadi day per double dhamaal 655

دیپالپورمیونسپل کمیٹی میں دوہراجشن آزادی کیسے منایاگیا ؟

تحریر:قاسم علی۔۔۔
14اگست کا دن بلاشبہ ہر پاکستانی کیلئے ایک خاص اہمیت رکھتا ہے کہ اس روز اللہ تعالیٰ نے ہمیں آزادی جیسی گرانقدر نعمت سے نوازا ۔
اس روز پورے ملک کی طرح دیپالپور میں بھی جشن آزادی کی مختلف تقاریب منعقد کی جاتی ہیں تاہم اس سلسلے کی سب سے بڑی تقریب میونسپل کمیٹی دیپالپور میں منعقد ہوتی ہے جس میں دیپالپور بھر کی سیاسی،سماجی،علمی و ادبی،کاروباری اور صحافتی شخصیات سمیت معززین علاقہ اور عوام کی بڑی تعداد بھرپور شرکت کرتی ہے ۔چونکہ ضلع اوکاڑہ اور خاص طور پر دیپالپور مسلم لیگ ن کا گڑھ سمجھاجاتا ہے اسی لئے اس تقریب کی ایک خاص بات یہ رہی ہے کہ گزشتہ کئی برسوں سے اس کے مہمانان خصوصی ہمیشہ پاکستان مسلم لیگ ن کے مقامی ایم این اے اورایم پی اے ہی ہوتے تھے مگر اس بار یہ تقریب پہلے کی نسبت یکسر مختلف تھی کیوں کہ اس بار اس اہم ترین ایونٹ میں مہمان خصوصی کی نشستوں پر مسلم لیگی رہنماؤں کی بجائے پی ٹی آئی کے رہنما سیدگلزار سبطین شاہ،چوہدری طارق ارشاد خان اور میاں خرم جہانگیروٹو براجمان تھے اور یہی نہیں بلکہ ان کیساتھ حال ہی میں پاکستان مسلم لیگ ن کی ضلعی صدارت سے مستعفی ہونیوالے سید زاہد شاہ گیلانی بھی پورے پروٹول کیساتھ موجود تھے۔میونسپل کمیٹی کی اس یوم آزادی تقریب میں منظرنامے کی یہ تبدیلی اصل میں دیپالپور کی سیاست میں تبدیلی کا بھی واضح اشارہ نظر آرہی تھی۔اوراس تبدیلی کی وجہ سمجھنے کیلئے کسی افلاطونی دماغ کی ضرورت نہیں کیوں کہ تقریب میں موجود ہر شہری یہ بخوبی جانتا تھا کہ چند روز قبل چیئرمین بلدیہ میاں فخرمسعود بودلہ کے خلاف تحریک عدم اعتماد کے بعد شروع ہونیوالی سیاسی رسہ کشی اور پھر اس میں میاں فخرمسعود بودلہ کی کامیابی کی وجہ سے یہ صورتحال سامنے آئی ہے اور چونکہ چیئرمین صاحب کے خلاف اس تحریک عدم اعتماد کو ناکام کرنے میں پاکستان تحریک انصاف کے مقامی رہنماؤں سیدگلزار سبطین ،چوہدری طارق ارشاد خان اور سب سے بڑھ کر سید زاہد شاہ گیلانی نے مرکزی کردار ادا کیا تھا اس لئے لازمی طور پر سٹیج پر بھی انہوں نے بیٹھنا تھا ۔اس موقع پر میاں فخرمسعود بودلہ،میاں بلال عمر بودلہ ،سید زاہد شاہ گیلانی اور ان کے دیگر حامی اس طرح پرجوش نظرآرہے تھے جیسے آج وہ دوہرا یوم آزادی منا رہے ہوں ایک پاکستان کی آزادی کا اور دوسرا خود میونسپل کمیٹی دیپالپورکی آزادی کا ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں