abul qayum daula 11th death anniversary 603

دیپالپور کی معروف مذہبی و سماجی شخصیت کو ہم سے بچھڑے گیارہ برس بیت گئے

تحریر:قاسم علی …
وہ صورتیں الٰہی جانے کہاں بستیاں ہیں
کہ جن کے دیکھنے کو آنکھیں ترستیاں ہیں
بلاشبہ یہ زندگی فانی ہے جو اس دنیا میں آیا ہے اسے ایک دن یہاں سے چلے جانا ہے لیکن کچھ شخصیات ایسی ہوتی ہیں جو خود تو دنیا سے چلی جاتی ہیں مگر ان کی یادیں اورخدمت انسانی کیلئے ادا کیا گیا ان کا کردار انہیں کبھی مرنے نہیں دیتا.ڈولہ پختہ دیپالپور کی شان اور عظیم مبلغ میاں عبدالقیوم ڈولہ بھی ایسی ہی ایک نابغہ روزگار شخصیت تھے جن کو ہم سے بچھڑے گیارہ برس بیت گئےآپ ایک انتہائی محبت کرنیوالےاور شفیق انسان تھے جنہوں نے اپنی پوری زندگی دین کی خدمت کیلئے وقف کررکھی تھی اوراسی دوران ہی انہوں نے آج سے ٹھیک گیارہ سال پہلے اپنی جان جانِ آفریں کے سپرد کی انہوں نے تبلیغ دین کیلئے پورے ملک کے علاوہ بیرون میں بھی کئی اسفار کئے ان کے منفرد لب و لہجے اور موثر انداز گفتگو سے حاضرین پر گہرا اثر ہوتا تھا اور بیشمار لوگوں نے ان کی گفتگو،کردار اورامت مسلمہ کیلئے درد سے متاثر ہوکراپنی زندگیاں دینِ متین کیلئے وقف کردیں.دعوت وتبیلغ میں زندگی صرف کرنے سے پہلے انہوں نے سیاست میں بھی حصہ لیا تھااوریہاں بھی عوام نے انہیں پزیرائی بخشی اورانہیں یونین کونسل املی موتی کے لئے چیئرمین منتخب کیا گیا.لیکن اس کے بعد وہ دین کی ترویج و تبلیغ میں ہی مصروف رہے.میری خوش قسمتی ہے کہ ان کی زندگی کے آخری رمضان المبارک کے پورے ماہ میں مجھے ان کی صحبت و خدمت کا موقع ملا.میں اس وقت کا گواہ ہوں کہ آپ نے یہ رمضان بھی انتہائی علالت میں گزارا لیکن جب وہ بیان کرنے بیٹھتے ان کی گونج دار اور اخلاص سے بھری آواز مجمع پر ایک سکتہ طاری کردیتی .یہی نہیں بلکہ رمضان کے بعد اسی بیماری کی حالت میں انہوں نے اللہ کی راہ میں جانے کی ٹھان لی اورقدرت کو بھی یہی منظور تھا کہ دنیا سے وقت رخصت وہ اللہ کی راہ میں سفر کررہے ہوں اور پھر ایسا ہی ہوا کہ آپ دیپالپور سے رائیونڈ پہنچے اور وہیں اپنی جان جان آفرین کے سپرد کردی.میاں عبدالقیوم صاحب کوعوام الناس اور علمائے کرام میں انتہائی عزت و اکرام حاصل تھا.ان کی گیارہویں برسی پرملک بھر سے علمائے کرام اور معروف سیاسی سماجی اور ادبی شخصیات نے ان کے درجات کی بلندی کیلئے دعا کرنے کیساتھ ساتھ ان کی زندگی کو مشعلِ راہ قرار دیا ہے۔
abul qayum daula 11th death anniversary

Subscribe
ہماری تمام سٹوریز اپنے میل باکس میں حاصل کرنے کیلئے سبسکرائب کیجئیے
I agree to have my personal information transfered to MailChimp ( more information )

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.