580

دیپالپور کی معیشت میں آلو کے سیزن کا کردار

تحریر: قاسم علی….
دیپالپور کو زرعی لحاظ سے پورے پنجاب میں مرکزی اہمیت حاصل ہے جس کا ساٹھ فیصد سے زائد رقبہ زراعت کیلئے نہائت موزوں ہے جہاں پر گندم،مکئی،کپاس اور آلو کی فصلیں کاشت کی جاتی ہیں تاہم مقامی آلو پنجاب ہی نہیں پورے جنوبی ایشیا میں ایک منفرد مقام رکھنے والی فصل ہے اس لئے جب آلو کا سیزن شروع ہوتا ہے تو اس سے منسلک بیشمار افراد میں خوشحالی کی لہر دوڑ جاتی ہے دیپالپور میں آلو کی فصل کی بہت زیادہ مقدار کے پیش نظر گزشتہ برس انٹرنیشنل سبزی و فروٹ منڈی کا قیام عمل میں آیا جس سے کسانوں کیساتھ ساتھ دیگر کئی طبقات کو بھی روزگار کے بے پناہ مواقع میسر آئے ہیں۔

ملک قاسم علی جانی انٹرنیشنل سبزی و فروٹ منڈی رجسٹرڈکے صدر ہیں انہوں نے بتایا کہ اگرچہ پاکپتن ،حویلی لکھا ،رینالہ اوکاڑہ میں بھی کافی آلو ہوتا ہے مگر دیپالپور اس لحاظ سے پہلے نمبر پر ہے دیپالپور زراعت کیلئے جنت کی حیثیت رکھتا ہے جہاںَبیس لاکھ ٹن سے زائد آلو پیدا ہوتا ہے جو نہ صرف ملکی ضروریات کا بڑا حصہ پورا کرتا ہے بلکہ یہاں کا آلو بیرون ملک بھی پسند کیا جاتا ہے اور بھاری مقدار میں ایکسپورٹ ہوتا ہے جس سے مقامی زمیندار کی معیشت پر انتہائی اچھے اثرات مرتب ہوتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ گزشتہ برس اس منڈی میں سات لاکھ ٹن کے آلو کا بزنس ہوا ہے اور اب کی بار اس میں اضافے کا امکان ہے۔ گزشتہ برسوں میں بیرون ملک ایکسپورٹ میں کچھ مشکلات درپیش تھیں جس سے آلو کا ریٹ بھی کم ہوگیاتھااس بارے انہوں نے کہا کہ اب حکومتی کوششوں کے نتیجے میں بیرون ملک آلو کی ایکسپورٹ کے مزیددروازے کھل رہے ہیں جس سے مقامی آلو کا ریٹ بہت اوپر چلا جائے گا اور اس کا اثر فارمر سے لے کر مزدور اور عام دوکانداروں تک ہر ایک پر پڑے گا۔

potato season role in depalpur economy
depalpur agriculture

آلو کی یہ فصل مقامی معیشت میں کس طرح کردار ادا کرتی ہے ،اس سوال پر ان کا کہنا تھا کہ اس علاقے میں ایسے لوگوں کی بڑی تعداد ہے جوروزانہ دیہاڑی کماکر اپنے بچوں کا پیٹ پالتی ہے اور عام طور پر کبھی دیہاڑی لگتی ہے اور کبھی نہیں مگرجب آلو کا سیزن شروع ہوتا ہے تو علاقے میں کوئی بھی فارغ نظر نہیں آتا بلکہ دیہات میں تو یہ صورتحال ہوتی ہے کہ مردوں کیساتھ خواتین بھی آلو کی چنوائی اوربھرائی سے روزانہ پانچ سے سات سو روپے کما لیتی ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ اس علاقے میں آلو کی فراوانی کو دیکھتے ہوئے ہی ہم نے یہاں پر سبزی منڈی کے قیام کا فیصلہ کیا اور آپ دیکھیں کہ اب تک اس منڈی میں ایک سو سے زائد آڑھتیں تعمیر کی جاچکی ہیں اور مزید بھی بن رہی ہیں جس سے بیشمار مستری اور مزدوروں کو روزانہ کی بنیاد پرایک سال سے مستقل روزگار حاصل ہوا ہے علاوہ ازیں ان آڑھتوں کے قیام کے بعدپڑھے لکھے نوجوانوں کو ملازمتیں ملی ہیں اور عوام کو خوشحالی ملی ہے۔
آلو کے سیزن سے عام لوگوں کو کس طرح فائدہ حاصل ہوتا ہے میں نے اس بارے مختلف لوگوں سے بھی بات چیت کی ۔مقبول احمد بہاولداس کا رہائشی ایک نوجوان ہے وہ بھی آلو کے سیزن کو اپنے لئے بہت فائدہ مند سمجھتا ہے اس نے بتایا کہ اس نے بنک سے قرض لے کر لوڈر گاڑی بنائی مگر کام کی روٹین ٹھیک نہ رہی اور بنک اقساط بھی ادا کرنا مشکل ہوگیا مگر اس دوران آلو کا سیزن شروع ہوگیا تو میرے وارے نیارے ہوگئے کیوں کہ مجھے کسی دوست نے منڈی کی راہ دکھادی اب روزانہ میں دیہات سے آلو سبزی منڈی لاتا ہوں جس سے میرے لئے قسط کی ادائیگی بھی آسان ہوگئی ہے اور روزی روٹی بھی اچھی چل پڑی ہے۔ا

malik qasim ali jani
potato season role in depalpur economy

اشتیاق احمد میرا بچپن کا دوست ،کلاس فیلو اور ہمسایہ ہے مجھے پتا چلا کہ وہ بھی نئی سبز منڈی میں ہی ہوتا ہے اور آلو کے بزنس سے وابستہ تو میں نے اس سے بھی رائے لی اور اس نے بڑی اہم بات کی کہ دیپالپور میں کوئی صنعت یا بڑی مل اور کارخانہ نہیں ہے جہاں پر لوگ جاب حاصل کرسکیں ایسے میں آلو کاسیزن لاکھوں لوگوں کیلئے معاشی خوشحالی لاتا ہے جس کے ذریعے آلو کی تڑوائی اور بھرائی سے لے کرٹرانسپورٹ کے ذریعے سبزی منڈی لانے ،اتارنے ،بولی لگانے اور خرید و فروخت تک بہت بڑی افرادی قوت درکار ہوتی ہے جن کو روزگار ملتا ہے ۔اس نے کہا کہ حکومت کو چاہئے کہ ہر علاقے میں صنعتی یونٹ قائم کرے اور خاص طور پر دیپالپور جو کہ پنجاب کی سب سے بڑی تحصیل ہے میں روزگار کے زیادہ سے زیادہ موقع پیدا کرنے کیلئے کارخانے اور ملیں ضرور بنانی چاہئیں۔اس نے نیو انٹرنیشنل سبزی و فروٹ منڈی کے صدر ملک قاسم علی جانی کا شکریہ بھی ادا کیا کہ اس نے دیپالپور میں اتنا بڑا پروجیکٹ شروع کیا جس سے نہ صرف کسانوں کو اپنی فصل کا معقول معاوضہ بروقت مل جاتا ہے بلکہ اس کے قیام سے لے کر ابتک مزدور طبقے کو روزگار کے بے پناہ مواقع ملے ہیں ۔
سبزی منڈی کے اندر فوجی ہوٹل کے مالک اللہ دتہ نے بتایا کہ پہلے وہ بازار میں کام کرتا تھا مگر اس سے تو روٹی بھی پوری نہیں ہوتی تھی پھر مجھے کسی نے سبزی منڈی میں آنے کا کہا اب میں بہت خوش ہوں کہ اگرچہ آلو کے علاوہ یہاں پر کوئی خاص رش نہیں ہوتا مگر آلو کا سیزن ساری کسریں نکال دیتا ہے ۔
محمد شہزاد نے بتایا کہ اس نے بی اے کررکھا ہے مگر کہیں نوکری نہ مل رہی تھی جس سے میں سخت مایوس تھا ایک دن میں سبزی لینے کیلئے یہاں منڈی آیا تو مجھے ایک دوست نے مجھے ایک آڑھتی سے ملوایا جس نے مجھے فوراََ نوکری پر رکھ لیا جس پر میں اور میرے والدین بہت خوش ہیں اس نے بتایا کہ میرے علاوہ کئی دیگر پڑھے لکھے لوگوں کو بھی آلو کے سیزن میں بطور منشی ملازمت مل جاتی ہے بیشک آلو کا سیزن اس علاقہ کیلئے کسی نعمت سے کم نہیں۔
محمد شعبان پرانی سبزی منڈی کے باہر باربی کیو لگاتے ہیں انہوں نے بتایا کہ میرے سات بچے ہیں اور میں پہلے لاہور کام کرتا تھا مگر موجودہ حالات میں بچوں کو چھوڑ کر اتنا دور جانا مناسب نہ لگتا تھا ایسے میں آلو کا سیزن میرے لئے بہت اچھا آئیڈیا بن گیا میں نے یہاں پر کام شروع کیا اور وہ شروع میں ہی چل پڑا کیوں کہ منڈی میں ہر وقت رونق میلہ رہتا ہے آلو کا سیزن واقعی اہل دیپالپور کیلئے خوشحالی کی نوید بن کر آتا ہے۔تاہم آلو بھرنے والی بعض خواتین نے یہ شکوہ کیا کہ انہیں ان کی محنت کے مطابق مزدوری نہیں ملتی زمیندار بھائیوں کو اس بارے ضرورسوچنا چاہئے۔

Subscribe
ہماری تمام سٹوریز اپنے میل باکس میں حاصل کرنے کیلئے سبسکرائب کیجئیے
I agree to have my personal information transfered to MailChimp ( more information )

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.